78

33سالہ شخص نے گائے کو درخت کے ساتھ باندھ کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

دنیا بھر میں بچے بچیوں اور خواتین کے ساتھ زیادتی کے واقعات رپورٹ ہوتے ہیں لیکن بھارت میں جہالت اور درندگی کی ہیبت ناک مثال دیکھنے میں آئی جب ایک شخص نے گائے کو اپنی جنسی ہوس کا نشانہ بنا لیا۔ 33 سالہ شخص نے گائے کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد مار ڈالا۔تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست کیرالہ کے ضلع کنور میں ایک المناک حادثہ پیش آیا جہاں ایک شخص نے گائے کو اپنی ہوس کا نشانہ بنا ڈالا۔
سومیش نامی شخص نے جانوروں کے تبیلے سے دو سال کی عمر والی گائے کو لیا اور اسے درخت کے ساتھ باندھ دیا اور زیادتی کا نشانہ بنایا۔ گائے درخت کے ساتھ بندھی رسی کے ساتھ کھینچا تانی کے باعث مر گئی۔ تبیلے کے مالک نے گائے کے غائب ہونے پر اسے دھونڈا تاہم ناکام رہا۔
گاؤں والوں کے ساتھ مل کر گائے کی تلاش شروع کی تو اسے کچھ دیر بعد گائے کی لاش ملی، پولیس نے ملزم کو گرفتار کر لیا ہے۔

ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔پولیس نے جائے وقوعہ سے ملزم کے کپڑے بھی برآمد کر لیے گئے ہیں۔خیال رہے بھارت میں جانوروں کے ساتھ زیاتی کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے۔ اس سے قبل ایک واقعہ بھارت میں پیش آیا تھا جہاں 8 افراد نے حاملہ بکری کو اپنی جنسی ہوس کا نشانہ بنایا تھا، جس کے بعد بکری جان سے ہاتھ دھو بیٹھی۔ بھارت کے شہر ہریانہ کے ایک گاؤں کے رہائشی شخص نے بتایا کہ میں نے شراب کے نشے میں دھُت ہو کر بکری کو ہراساں کرتے آٹھ افراد کو دیکھا تو شور مچا دیا۔
جس کے آٹھ گھنٹے بعد وہ دوبارہ آئے ، میری بکری کو اُٹھا کر لے گئے اور اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ کچھ وقت کے بعد بکری کے مالک کو پاس موجود ایک گھر سے اپنی بکری کے کراہنے کی آواز سنائی دی۔ آٹھ ملزمان میں سے پانچ موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔ بکری کے مالک نے بتایا کہ ملزمان میں سے ایک شخص ذہنی بیمار ہے۔ جب میں نے ان سے کہا کہ میں تم سب کے خلاف شکایت در کرواؤں گا تو انہوں نے مجھے دھمکاتے ہوئے کہا کہ جو کرنا ہے کر لو ، ہم ایسے ہی کرتے رہیں گے۔۔ بکری کے مالک نے بتایا کہ اس واقعہ کے بعد حاملہ بکری چلنے پھرنے سے قاصر ہو گئی اور ٹھیک 24 گھنٹوں کے بعد جان کی بازی ہار گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں