10

گیس صارفین کیلئےخوشخبری، صارفین کو کروڑوں روپے واپس کرنے کافیصلہ

مہنگی گیس پر وزیراعظم عمران خان کے نوٹس کے بعد صارفین سے موصول کی گئی کروڑوں روپے کی رقم واپس کرنے کافیصلہ کر لیا گیا ہے۔ تفصیل کے مطابق کم گیس پریشر والے علاقوں میں اضافی بل بھیجنے کی رپورٹ وزیراعظم عمران خان کو بھیجی گئی۔ جس کے بعد گیس پریشر اور موصول بلوں کا جائزہ لیا گیا ۔ گیس پریشر کم نکلنے پر وزیراعظم عمران خان نے سوئی اندرن گیس پر اظہار برہمی کیا۔
جس کے بعد سوئی نادرن گیس بورڈ نے کم پریشر ہونے کے باوجود زیادہ بل بھیجنے والے صارفین کو 513 ملین روپے واپس کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ 50 ملین صارفین روپے صارفین کو واپس کر دیئے گئے ہیں تاہم 463 ملین روپے کی واپسی کا سلسلہ بھی شروع کر دیا گیا ہے۔ یاد رہے صارفین کی جانب سے شکایات درج کرانے کا سلسلہ جاری تھی، صارفین کا کہنا تھا کہ گیس کا پریشر انتہائی کم جبکہ بل زیادہ پریشر کے مطابق بھیجا گیا۔
جس پر تحقیقات کے بعد اس بات کو تسلیم کیا گیا اور صارفین سے اضافی موصول کئے گئے پیسے واپس کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ واضح رہے حکومت نے گیس کے نرخوں میں بھی اضافہ کیا تھا۔ گیس مہنگی ہونے کا اعتراف رہنما تحریک انصاف جہانگیر ترین بھی کر چکے ہیں انہوں نے کہا تھا کہ گیس مہنگی ہونے کے باوجود سوئی گیس کی طلب میں 30 فیصد اضافہ ہوا۔ فاقی حکومت نے گیس بلوں کے ٹیرف کو تبدیل کیا تھا ۔
ٹیرف کو تبدیل کرتے ہوئے صارفین جتنی گیس استعمال کریں گے اتنا ہی بل بھیجا جائے گا۔ آئندہ آنے والا بل فی یونٹ سیلب کے مطابق ہوگا۔ بلنگ فلیٹ ریٹ کے بجائے الگ الگ سیلب کے مطابق ہوگی ۔ حکومت کے گیس ٹیرف کو تبدیل کرنے کے فیصلے کو عوام نے سراہا۔ اس سے قبل گیس 720روپے فی ایم ۔ ایم ۔ بی، ٹی، یو سے بڑھا کر 1300روپے کی کردی گئی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں