58

ایران نے یوکرائنی طیارے کو مار گرانے کا اعتراف کر لیا

ایران نے یوکرائنی طیارے کوغیر ارادی طور پرمار گرانے کا اعتراف کر لیا ہے۔ ایرانی فوج نے غلطی سے یوکرائنی طیارے کو نشانہ بنایا، طیارے کو نشانہ بنانا “انسانی غلطی” ہے۔ تفصیلات کے مطابق ایران نے یوکرائنی طیارے کو مار گرانے کی غلطی کو تسلیم کر لیا ہے۔ ایرانی سرکاری ٹی وی نے فوج کا حوالہ دیتے ہوئے تسلیم کر لیا ہے کہ ان کی فوج نے غلطی سے یوکرائنی طیارے کو مار گرایا تھا۔
ایرانی سرکاری ٹی وی کے بعد ایرانی وزیر خارجہ کی جانب سے بھی ایک ٹوئیٹر پیغام میں اس خبر کی تصدیق کر دی گئی ہے۔ ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کا ٹوئیٹر پیغام میں کہنا ہے واقعے پر افسوس اور متاثرہ خاندانوں سے معذرت چاہتے ہیں۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ایرانی فوجی حکام کا کہنا ہے کہ امریکہ کے ساتھ کشیدگی کے تناظر میں فوج انتہائی الرٹ تھی اور طیارے کو پاسداران انقلاب کے حساس عسکری سینٹر کی طرف بڑھتے ہوئے ہدفِ مخالف سمجھ لیا گیا اور غلطی سے نشانہ بنایا گیا۔
علاوہ ازیں ایران نے طیارے کو نشانہ بنائے جانے کی غلطی کو تسلیم کرتے ہوئے یہ اعلان کیا ہے کہ ذمہ داران کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ ایرانی حکام کا اس افسوسناک واقعے پر معذرت کرتے ہوئے کہنا ہے کہ آئندہ اس قسم کے واقعات سے نمٹنے کے لیے سسٹم کو مزید بہتر کیا جائے گا اور جدید تقاضوں کے مطابق ڈھالا جائے گا۔ اس سے قبل ایران نے یوکرائنی طیارہ حادثے سے متعلق امریکی جریدے کی رپورٹ مسترد کردی تھی۔
ایران کے سول ایوی ایشن چیف علی عباد زادہ نے موقف اختیار کیا تھا کہ تہران میں تباہ ہونے والے یوکرائن کے طیارہ حادثے سے متعلق پھیلائی جانے والی افواہیں بے بنیاد ہیں۔ ایران کے سول ایوی ایشن چیف کا کہنا تھا کہ سائنسی نقطہ سے اگر حادثے کا معائنہ کیا جائے تو معلوم ہوگا کہ طیارے پر میزائل سے حملہ کرنا ممکن نہیں ہے۔ ایران کی جانب سے طیارے پر کسی قسم کا کوئی میزائل فائر نہیں کیا گیا۔
انہوں نے حادثے سے متعلق پھیلائی جانے والی خبروں کو بے بنیاد قرار دے دیا تھا۔ مزید برآں امریکی جریدے نیوز ویک نے بھی دعویٰ کیا تھا کہ طیارے کو ایرانی اینٹی ائیرکرافٹ میزائل سے نشانہ بنا کر تباہ کیا گیا، ایران نے اسی باعث طیارے کا بلیک باکس بھی فراہم کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ واضح رہے کہ 3 روز قبل تہران کے انٹرنیشنل ہوائی اڈے سے اڑنے والا یوکرین کا بوئنگ 737 مسافر طیارہ حادثے کا شکار ہو گیا تھا جس میں مسافروں اور عملے سمیت 176 افراد سوار تھے۔ طیارہ اڑان بھرنے کے آٹھ منٹ بعد ہی گر کر تباہ ہو گیا تھا اور اس میں سوار عملے اور مسافروں میں سے کوئی بھی زندہ نہیں بچا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں