34

پنجاب میں امتحانی نظام کو مکمل طور پہ بدلنے کا فیصلہ کر لیا گیا

100میں سے نمبر نہیں آئیں گے اور نہ فرسٹ یا سیکنڈ پوزیشن آئے گی بلکہ اے، بی اور سی گریڈ دیا جائے گا
لاہور (20 اگست2019ء) پنجاب میں امتحانی نظام کو مکمل طور پہ بدلنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ اب میٹرک اور انٹرمیڈیٹ میں 100میں سے نمبر نہیں آئیں گے اور نہ ہی فرسٹ یا سیکنڈ پوزیشن آئے گی بلکہ اے، بی اور سی گریڈ دیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق پنجاب کابینہ نے میڑک اور انٹرمیڈیٹ کے امتحانوں میں گریڈنگ سسٹم کی منظوری دے دی ہے اور یہ فارمولہ فائنل کر لیا گیا ہے کہ کتنے نمبروں پر کون سا گریڈ دیا جائے گا۔
پنجاب کابینہ کے فیصلے کے مطابق جو طلباء 90 سے 100 نمبرز کے درمیان نمبر لیں گے انہیں اے پلس گریڈ دیا جائے گا، 87 سے 89 نمبرز کے درمیان اے گریڈ، 82 سے 86 نمبروں کے درمیان بی پلس گریڈ ہوگا۔ اسی طرح 77 سے 81 نمبرز کے درمیان بی گریڈ، 70 سے 76 نمبرز کے درمیان سی پلس گریڈ، 60 سے 69 نمبرز کے درمیان سی گریڈ، 50 سے 59 نمبروں کے درمیان ڈی پلس گریڈ ہوگا جبکہ 40 سے 49 نمبرز کے درمیان ڈی گریڈ اور سب سے کم 33 سے 39 نمبرز پر ای گریڈ دیا جائے گا جبکہ 33 سے کم نمبرز لینے والے طلباء فیل تصور کیے جائیں گے اور انہیں ایف گریڈ دیا جائے گا۔
ذرائع نے بتایا ہے کہ کابینہ نے منظوری دے دی ہے اور اب پنجاب میں گریڈنگ سسٹم کا اطلاق 2020ء سے کیا جائے گا۔ آئندہ نتائج میں نمبروں کے ساتھ گریڈز بھی شائع ہوں گے اور اصل اہمیت گریڈز کی ہی ہو گی۔ یاد رہے کہ گریڈنگ کے حوالے سے پہلے بھی کافی آراء وتجاویز سامنے آئی تھیں مگر موجودہ حکومت نے اس پر عمل کر کے پہل کر دی ہے۔ خیال رہے کہ پوری دنیا میں زیادہ تر گریڈنگ سسٹم ہی کام کرتا ہے اور اب پنجاب میں بھی اسی سسٹم کو لایا جا رہا ہے۔
دوسری جانب گزشتہ روز کلاس نہم کے رزلٹ کا اعلان کر دیا گیا ہے، طلباء و طالبات کو نتائج سے مطمئن نہ ہونے کی صورت میں3ستمبر تک ری چیکنگ کیلئے درخواستیں جمع کروانے کی ہدایت بھی کر دی گئی ہے۔اس حوالے سے تعلیمی بورڈز کا کہنا ہے کہ جن امتحانی نتائج کا اعلان کیا گیا ہے ان کے نتائج انتہائی احتیاط اور سپر چیکنگ کے بعد تیار کئے گئے ہیں جس میں غلطی کا امکان نہ ہونے کے برابر ہے تاہم ایسے طلباء وطالبات جو اپنے نتائج سے مطمئن نہ ہوں وہ رزلٹ آنے کے بعد سے 15 دن کے اندر یعنی 3ستمبر تک ری چیکنگ کیلئے درخواست دے کر اپنا پیپر خود چیک کر کے تسلی کر سکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں