increasing flour prices 10

پنجاب حکومت کا آٹے کی قیمتوں میں اضافہ کرنے والوں کو جیل بھیجنے کا فیصلہ

پنجاب حکومت کا آٹے کی قیمتوں میں اضافہ کرنے والوں کو جیل بھیجنے کا فیصلہ۔ تفصیلات کے مطابق یہ اعلان صوبائی وزیر صنعت و تجارت میاں اسلم اقبال کی جانب سے کیا گیا ہے جس میں ان کی جانب سے کہا گیا ہے کہ سرکاری نرخ سے مہنگا آٹا فروخت کرنے والے کو نہ صرف جیل جانا پڑے گا بلکہ آٹے کی زائد قیمت وصول کرنے کے جرم میں ان کی دکان بھی سیل کر دی جائے گی۔
بات کرتے ہوئے صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ حکومت مہنگا آٹا بیچنے اور زخیرہ اندازوں کے خلاف کریک ڈاؤن کر رہی ہے۔ پنجاب کے صوبائی وزیر اسلم اقبال نے واضح کیا کہ 20 کلو آٹے کا تھیلہ 860 اور 10 کلو تھیلے کی430 روپےمیں فروخت یقینی بنائی جائے۔ اس سے قبل آٹے کی قیمت میں اضافہ کر دیا گیا تھا جس کے بعد فائن آٹے کی 86 کلو کی بوری 100 روپے مہنگی کردی گئی تھی۔

اس حوالے سے نان روٹی ایسوسی ایشن کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ 86 کلو فائن آٹےکی بوری 5700 کی بجائے 5800 روپے میں فروخت ہو رہی ہے۔ ایسوسی ایشن کی جانب سے کہا گیا ہے کہ اگر آٹے کی قیمت یہی رہی تو نان کی قیمت 15 روپے کر دی جائے گی۔ خیال رہے کہ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان کی جانب سے ہدایات جاری کی گئی تھیں کہ ہرحال میں آٹے کی قیمت پرانی سطح پر بحال کی جائے، ذخیرہ اندوزوں کو پکڑیں یا سبسڈی دیں، لیکن غریبوں کو ہر حال میں سستا آٹا فراہم کریں۔
وزیراعظم عمران خان نے پنجاب میں آٹے کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹس لیتے ہوئے پنجاب حکومت کوہدایت کی ہے کہ آٹے کی قیمت میں فوری کمی کی جائے۔ ذخیرہ اندوزوں کو پکڑیں یا سبسڈی دیں، لیکن غریبوں کو ہر حال میں سستا آٹا فراہم کریں۔ ضلعی انتظامیہ کوہدایات جاری کی جائیں کہ آٹے کی قیمتوں میں اضافے پر کاروائی کریں۔ وزیراعظم کی ہدیات پر ضلعی انتظامیہ نے کاروائی کی اور 2 ارب سے زائد مالیت کی اشیائے خوردونوش کا سامان برآمد کیا ہے۔ تاہم وزیراعظم عمران خان کی ہدایت کے بعد بھی آٹے کی قیمت میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے، لیکن اب پنجاب حکومت نے بھی مہنگا آٹا بیچنے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ کر لیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں